پٹرولنگ افسران قوانین کے نفاذ کو بلاتفریق جاری رکھیں

انسپکٹر جنرل نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس محمد عامر ذوالفقار خان نے کہا کہ ہم اپنے دائرہ کار میں قا نون کی گر فت کمزور نہیں ہو نے دینگے کیو نکہ قا نون کی گر فت کمزور ہو نے کا مطلب ریا ست کی کمز وری ہے اور ریاست کو کمزور نہیں ہونا چاہیے۔ موٹروے پولیس کی کامیابی اس کی ایمانداری ، خوش اخلاقی اور شہریوں کی بے لوث خدمت کے ذریعے ہی ممکن ہوئی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے دفتر میں موٹروے (M-4) پر گوجرہ ٹول پلازہ پر ون وے کی خلاف ورزی کرنے اور موٹروے پولیس اہلکار پر تشدد کرنیوالے ملزمان کو گرفتار کرنے والے افسران سے ملاقا ت میں کیا ۔

    pics

گرفتار ملزمان کے قبضے سے نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس کے افسران نے بھاری تعداد میں اسلحہ بھی برآمد کیا تھا۔ ملاقات میں انسپکٹر جنرل ، نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس محمد عامر ذوالفقارخان نے نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس افسران کی بروقت کارروائی کو سراہاتے ہوئے کہا افسران نے بہترین ڈسپلن کا مظاہر ہ کرتے ہوئے نہایت بہادری سے ملزمان کو گرفتار کیا اور پیٹرول آفیسر قلب عباس کو شاباش دی جس نے صبر کا پیمانہ لبریز نہ ہونے دیا اور دوران تشدد خود زخمی ہوگیا مگر قانون کو ہاتھ میں نہ لیا ۔انہوں نے مزید کہا کہ آپ قانون کے مطابق بلاخوف و خطر اپنے فرائض منبصی سر انجام د یتے رہیں ،میں موٹروے پولیس فورس کے ساتھ کھڑا ہوں۔ انہوں نے مزید کہاکہ یہ بات انتہائی باعث مسرت و اطمینان ہے کہ آپ کو وہ مقام اور اعزاز حاصل ہے جو پاکستان میں کسی اور ادارے کو حاصل نہیں ۔ ملک کے تمام شہریوں کواس محکمے پر بھر پور اعتماد ہے ۔ ملاقا ت میں انہوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ پٹرولنگ افسران کی پیشہ ورانہ صلا حیتوں میں مزید اضافہ کیا جائے گااور ٹریفک قوانین کی خلاف ورزیوں پرزیرو ٹالیر نس کی پالیسی کو ہر ممکن طریقے سے جاری رکھا جائے گا ۔انہوں نے افسران کو ہدایات دیں کہ پٹرولنگ افسران قوانین کے نفاذ کو بلاتفریق جاری رکھیں اور اس میں کسی کے ساتھ کوئی رعائت نہیں کی جائے ۔انہوں نے مزید کہا کہ نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس کسی سے کوئی زیادتی نہیں کرتی اور قانون کا نفاذ بلاتفریق یکساں کرتی ہے اور عوام سے بھی یہی امید کی جاتی ہے کہ آپ ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی نہ کریں اور اگر خلاف ورزی کی جاتی ہے تو اخلاقی جرات کا مظاہر ہ کرتے ہوئے اسے قبول کریں اور قانون کا احترام کریں نہ کی مشتعل ہو کر زدو کوب کریں یا سفارش کے ذریعے قانون نافذ کرنے والے ادار ے کو انڈر پریشر کریں۔ انہوں نے کہا اس کیس کی پیروی کی جائے گی اور ملزمان کو قانون کے مطابق سزا دلوائی جائے گی۔