انتظامی اعتکاف 2018

* پاکستان میں پہلی بار نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس کے زیرانتظام انتظامی اعتکاف کا اہتمام ۔
* پوری قوم کو موٹروے پولیس پر فخر ہے نہ صرف اندرونی ملک بلکہ بیرونی ممالک میں بھی اس ادارے کو احترام کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔
* موٹروے پولیس میڈیکل پالیسی ، ٹائم سکیل پروموشن اور گاڑیوں کی بروقت فراہمی کو ہر حال میں یقینی بناؤں گا۔
(وزیر مملکت برائے مواصلات محمد جنید انوار چوہدری )
* نو سال کی عمر میں اعتکاف میں بیٹھ کر اپنے آپ کو جاننے ، پہچاننے اور زندگی کو فعال بنانے کے بارے میں سوچنے کا موقع ملا۔
* رکاوٹوں سے پاک ٹریفک، جدید اور بروقت امدادی سہولیات کی فوری فراہمی موٹروے پولیس کا طرہ امیتازہے۔
(انسپکٹر جنرل ، نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس ڈاکٹر سید کلیم امام)

rsz_1retreat_meeting
ترقی یافتہ ممالک میں اپنے اداروں کی کمزوریوں کا تجزیہ کرنے ،کمزرویوں کو دور کرکے اداروں کی کاکر دگی کو مزید بہتر بنانے کے ساتھ ساتھ آئندہ لایحہ عمل طے کرنے کیلئے Retreatکا عمل کرتی ہیں۔ پاکستان میں Retreatکا عمل متعارف کرانے کا سہرا انسپکٹر جنرل نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس ڈاکٹر سید کلیم امام کے سر ہے۔ پاکستان میں پہلی مرتبہ نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس نے INLاور SDPIکے ساتھ مل کر اپنے ادارے کی کمزرویوں کو دور کر کے کاکر دگی کو مزید فعال بنانے کیلئے اسلام آباد کے ایک مقامی ہوٹل میں دو روزہ انتظامی اعتکاف کا اہتمام کیا۔ پہلے روز کے انتظامی اعتکاف میں پورے پاکستان سے موٹرویز اور ہائی ویز کے تمام سینئر مینجمنٹ افسران نے شرکت کی۔ دو روزہ انتظامی اعتکاف کے پہلے دن کے مہمان خصوصی وزیر مملکت برائے مواصلات محمد جنید انوار چوہدری تھے۔دو روزہ انتظامی اعتکاف میں بین الاقوامی مبصرین نے شرکت کی تاکہ وہ موٹروے پولیس کی کا کر دگی کو مزید بہتر بنانے کے لئے اپنے تجاویز پیش کر سکیں۔ پہلے دن کے پہلے سیشن میں ایڈیشنل آئی جی نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس سینٹرل ریجن خالد محمود ، کمانڈنٹ نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس ٹریننگ کالج ڈی آئی جی مرزا فارن بیگ ، ڈی آئی جی نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس سینٹرل زون احمد ارسلان، ایس ایس پی کامران عادل ، ایس ایس پی حسنات، ایس ایس پی غلام جعفر ، ایکٹینگ ایس پی جاوید نے نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس ٹریننگ کالج شیخوپورہ اور سینٹرل ریجن کے مسائل اور آئندہ چیلنجز پر تفصیل سے روشنی ڈالی ۔ اس کے علاوہ ایڈیشنل انسپکٹر جنرل نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس نارتھ ریجن غلام رسول زاہد ، ، ڈی آئی جی نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس نارتھ زون محبوب اسلم، ایس ایس پی کامران عادل، ایس ایس پی وحید خٹک، ایکٹنگ ایس پی ثاقب اور ایکٹنگ ایس پی علی نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس نارتھ ریجن کو درپیش مسائل اور چیلنجز پر تفصیل سے روشنی ڈالی ۔ ڈی آئی جی ساؤتھ زون اور ڈی آئی جی ویسٹ زون عبدا لحیی بلوچ نے بھی اپنے اپنے زونز کو درپیش مسائل اور چیلنجز پر تفصیل سے روشنی ڈالی۔ ڈی آئی جی ہیڈ کواٹر نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس اشفاق احمد خان اور ڈی آئی جی آپریشنز عباس احسن نے ہیڈ کواٹر زون کو درپیش مسائل اور چیلنجز پر تفصیل سے روشنی ڈالی۔

rsz_1retreat

دو روزہ انتظامی اعتکاف کے پہلے روز کے مہمان خصوصی وزیر مملکت برائے مواصلات محمد جنید انوار چوہدری نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ موٹروے پر محفوظ سفر کو رواں دواں رکھنے کیلئے 1997میں موٹروے پولیس کے ادارے کا قیام عمل میں لایا گیا۔ بہترین کا رکردگی اور اعلیٰ معیار کی وجہ سے یہ ادارہ ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل اور اقوام متحدہ کے جائزہ کاروں کی نظر میں باوقار ادارہ ٹھہرا۔ نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس کو اس کی کار کردگی کی بنیاد پر Icon of Excellenceکا نام بھی دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ پوری قوم کو نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس پر فخر ہے ، اس ادارے کی کار کردی کی وجہ سے نہ صرف اندرونی ملک بلکہ بیرونی ممالک میں بھی اس ادارے کو احترام کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس نے انتظامی اعتکاف کا انعقاد کرکے بہت احسن اقدام کیا۔ Retreatکا تصور عام طور پر ترقی یافتہ ممالک میں بہتر طور پر سمجھا جاتا ہے۔ اس طریقہ کار کی بدولت اپنی کار کردگی کا جائزہ لیتے ہیں اور آنیوالے وقت میں اداروں میں مزید بہتری لانے کیلئے اقدامات کا جائزہ لیتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ موٹروے پولیس کے ہر شخص کے ساتھ مساوی سلوک روارکھنے اور روڈ یوزرز کی بروقت مدد کرنے کے جذبے نے باقی اداروں کیلئے چیلنج مہیا کیا ہے۔موٹروے پولیس اچھائی اور ترقی کی سمت بارش کا پہلا قطرہ ہے اور انشاء اللہ وہ وقت دور نہیں جب باقی ادارے بھی اس کی تقلید کریں گے۔انہوں نے کہا کہ موٹروے پولیس پر تنقید نہ ہونے کے برابر ہے۔ قومی شاہراؤں پر حادثات کی روک تھام اور عوام میں روڈ سیفٹی کی شعور کو اجاگر کرنے کے سلسلے میں انسپکٹر جنرل ،ڈاکٹر سید کلیم امام اور موٹروے پولیس کے افسران کی کر دگی کو سراہا اور کہا کہ روڈ سیفٹی سیلبیس کی منظور ی موٹروے پولیس کی ایک اور اہم کامیابی ہے۔ بطور وزیر مملکت برائے مواصلات موٹروے پولیس کی فلاح و بہبود کے لئے کوشاں ہوں ۔ موٹروے پولیس میڈیکل پالیسی ، ٹائم سکیل پروموشن اور گاڑیوں کی بروقت فراہمی کو ہر حال میں یقینی بناؤں گا۔ انہوں نے کہا موٹروے پولیس نے انتظامی اعتکاف کا اہتمام کرکے ایک اور اچھی مثال قائم کی ہے اور آئندہ آنے والے دنوں میں سی پیک کی وجہ سے پاکستان میں داخل ہونے بین الاقوامی ٹریفک چیلنجز بہتر طریقے سے نمٹنے میں مدد ملے گی۔انسپکٹر جنرل ، نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس ڈاکٹر سید کلیم امام نے اپنے خطبہ استقبالیہ میں کہا کہ انہوں نے نو سال کی عمر میں اعتکاف میں بیٹھے تو اپنے اپ کو جاننے ، پہچاننے اور زندگی کی کو فعال بنانے کے بارے میں سوچنے کا موقع ملا اور آج موٹروے پولیس کے ادارے نے بھی دوروزہ انتظامی اعتکاف کا اہتمام کیا ہے ۔ جس میں ہم اپنی ذمہ داریوں و مقاصد کا تجزیہ کریں گے اور اپنی کمزریوں کو دور کرنے کیلئے اکٹھے ہوئے ہیں اور دوسرے روز کے سیشن میں دنیا کی بہترین اداروں کے ساتھ مل کر اپنی کا کر دگی کومزید بہتر بنانے کیلئے رہنمائی لیں گے ۔ انسپکٹر جنرل ڈاکٹر سید کلیم امام نے مزید کہا کہ ہر قسم کی تفریق اور تعصب سے بالا تر قانون کا یکساں نفاذ ، رکاوٹوں سے پاک ٹریفک، جدید اور بروقت امدادی سہولیات کی فوری فراہمی موٹروے پولیس کا طرہ امیتازہے۔ زندگی کے ہر طبقے اور شعبے سے تعلق رکھنے والے خواتین اور حضرات میں قوانین کے مطابق محفوظ ڈرائیونگ کے شعور کو اجاگر کرنا اور حادثات سے پاک معاشرے کا فروغ نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس کا نصب العین ہے۔ہم دو روزہ انتظامی اعتکاف کے منعقد کرنے پر SDPIاور INLکا شکریہ ادا کرتے ہیں کہ وہ ہمارے ساتھ ہیں اور اس پروگرم کو عملی جامہ پہنانے میں اہم کردار ثابت ہو گا۔اس موقع پر ایگزیکٹو ڈائریکٹر SDPIڈاکٹر عابد قیوم سلہری نے نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس کو اپنی کا کر دی گی کو مزید بہتر بنانے کے لئے انتظامی اعتکاف منعقد کرنے کو سراہا۔